ایک باپ کے آنسو

ایک باپ کے آنسو
ایک باپ کے آنسو
ایک باپ کے آنسو
ہم ٹشو پیپر میں رکھ چھوڑیں گے
اور اسے کبھی سوکھنے نہیں دیں گے
اس میں ہم اپنے آنسو بھی ملاتے جائیں گے
ایک ماں کے آنسو جن کے ہم ذمہ دار نہیں
ان کو سمیٹنے کے لئیے
ہم خدا سے کہیں گے
اب ان آنسوؤں کی رکھوالی تجھےکرنا چاہئیے
اگر نہیں
تو یہ سمندر بھی بن سکتے ہیں
پھر تیری بنائی ہوئی اس دنیا کو
نوح کی کشتی بھی میسر نہیں ہوگی
پھر کیا ہو گا؟
پھر کیا ہونا چاہئیے

Image: BBC Urdu

Did you enjoy reading this article?
Subscribe to our free weekly E-Magazine which includes best articles of the week published on Laaltain and comes out every Monday.

Related Articles

سوسن فیروز: بندوق اور بارود کو سُروں سے للکارنے والی نوجوان افغان ریپ گلوکارہ

افغانستان میں ۳۲ سالہ لڑکی سوسن فیروز کو خواتین کی آزادی کی مخالف قوتوں نے اپنی من چاہی قدروں کے

چُپ

علی شاد: دروازہ مت کھولو
کہ باہر سوال آئے ہیں
جن کو پناہ دینا
جرم گردانا گیا ہے

Is there where the god abides?

Far and far away
Till the end of the way
Behind the barrier of light
Where can reach no sight
Is there where the god abides?