ایک باپ کے آنسو

ایک باپ کے آنسو
ایک باپ کے آنسو
ایک باپ کے آنسو
ہم ٹشو پیپر میں رکھ چھوڑیں گے
اور اسے کبھی سوکھنے نہیں دیں گے
اس میں ہم اپنے آنسو بھی ملاتے جائیں گے
ایک ماں کے آنسو جن کے ہم ذمہ دار نہیں
ان کو سمیٹنے کے لئیے
ہم خدا سے کہیں گے
اب ان آنسوؤں کی رکھوالی تجھےکرنا چاہئیے
اگر نہیں
تو یہ سمندر بھی بن سکتے ہیں
پھر تیری بنائی ہوئی اس دنیا کو
نوح کی کشتی بھی میسر نہیں ہوگی
پھر کیا ہو گا؟
پھر کیا ہونا چاہئیے

Image: BBC Urdu

Did you enjoy reading this article?
Subscribe to our free weekly E-Magazine which includes best articles of the week published on Laaltain and comes out every Monday.

Related Articles

احساس

خدایا،
میں نہیں کافر،
نہ مجھ کو کفر بکنے کا ھے کوئی شوق

رونقِ دہر میں۔۔۔۔

شیراز اسلم کی فوٹو گرافی (Published in The Laaltain - Issue 8) Did you enjoy reading this article?Subscribe to our

چپ کی تعمیر سے پہلے کا سفر

ثروت زہرہ: چپ کی تعمیر سے پہلے کا سفر
کون لکھے گا؟
کسے یاد ہے اب؟