بھینسے کا خدا

بھینسے کا خدا
بھینسے کا خدا
حمد اس کی جو روند دیتا ہے
مٹی، ریت، خاردار میدان
دہلا دیتا ہے ٹیلوں کے دل
قوی سُموں کی دھمک سے
پھاڑ دیتا ہے رقیب کی پیشانی
اپنی عظیم ٹکر سے
جس کے سینگ شش جہت میں پھیلے ہیں
چمکیلی انیوں میں
ایسے رحمِ مادر پروئے
جن میں رقیب کا جنین پل سکتا
آفاق کی سرخی سے لبریز
اس کی آنکھ
ماداوٗں کی پُشتیں گھیرے رہتی ہے
مکھیاں گھس آتی ہیں
ہر سوراخ میں
ان کا کاٹا اپنی موٹی کھال پہ لکھتا ہوں
مگر خداوند
ان کی بھن بھن میری حمد کو چھلنی کر دیتی ہے

Image: Vasko Taškovski

Did you enjoy reading this article?
Subscribe to our free weekly E-Magazine which includes best articles of the week published on Laaltain and comes out every Monday.
Hussain Abid

Hussain Abid

Poet and Musician Hussain Abid, was born in Lahore and is currently living in Germany. His poetry collections; "Utri Konjain", "Dhundla'ay din ki Hidat" and Behtay Aks ka Bulawa" have been praised by the general audience and the critics alike. Hussain Abid collaborated with Masood Qamar to produce "Kaghaz pe Bani Dhoop" and "Qehqaha Isnan ne Ejad kia". Abid's musical group "Saranga" is the first ever musical assemble to perform in Urdu and German together.


Related Articles

میں پرندوں کی طرح طلوع ہونا چاہتا ہوں

نصیر احمد ناصر:
میں اِس رات کی صبح دیکھنا،
اور پرندوں کی طرح
تمھارے ساتھ طلوع ہونا چاہتا ہوں

زہر کی پھانک

صفیہ حیات: ہم سب جھوٹے ہیں
ایک ہی رشتہ سے بندھے عمر بتاتے ہیں
بھلا رشتہ اور پھول بھی کبھی
سدا بہار ہوئے۔۔۔؟

کھرے عشق کا المیہ

شارق کیفی: محبت کا حد سے گزرنا ہی بے کیف کرتا ہے اس کو
کھرا عشق یوں بھی اداسی ہے