دنیا کی تمام عورتوں کو جمع کرلو

دنیا کی تمام عورتوں کو جمع کرلو

دنیا کی تمام عورتوں کو جمع کرلو
ان عورتوں کو
جنہوں نے اپنے بیٹے کھوئے ہیں
جنہوں نے اپنے بچے کھوئے ہیں
اور ان کو ایک دائرے میں بیٹھا دو
اور انہیں رونے کی اجازت بھی دے دو
پھر دیکھو
تمھیں کان پڑی آوازبھی سنائی نہیں دے گی
ان کے بین مل کر جو آواز پیدا کریں گے
وہ تم کو بہرا کردیں گے
ان کے آنسو سیلاب بن کر تمہیں بہا لے جائیں گے
روک دو اب یہ سب جو تم کر رہے ہو
روک دو
اب یہ تماشہ جو تم دنیا کے ٹھیٹر پر کھیل رہے ہو
بہت ہو گیا
کیا تم چاہتے ہو کہ سمندر تم پر چڑھ دوڑے
اور بہا لے جائے اس دنیا کو
پھر تم کہاں جاؤ گے
کیا کوئی خدا تم نے اپنے زور سے خرید لیا ہے
اگر ایسا ہے
کہ خدا کو خریدا جا سکتا ہے
پھر تو سب ایسا ہی چلتا رہے گا
یہ عورتیں ایسے ہی بین کرتی رہیں گی
اور کھوتی رہیں گی
اپنے بچے
اور روتی رہیں گے ایک آواز میں
ایک ایسی آواز میں
جو ایک دن آسیب بن جائے گی
اور تمھارا خریدا ہواخدا بھی اس کی دہشت سے کانپ رہا ہو گا
Image: Käthe Kollwitz

Did you enjoy reading this article?
Subscribe to our free weekly E-Magazine which includes best articles of the week published on Laaltain and comes out every Monday.

Related Articles

Eid in the Paradise of Blood

Zeeba T. Hashmi     [On 27th Ramzan (7th August, 2013), one Colonel belonging from Peshawar, one from Lahore and another

روتا ہوا بکرا

شارق کیفی: وہی بکرا
مرا مریل سا بکرا
جسے ببلو کے بکرے نے بہت مارا تھا وہ بکرا
وہ کل پھر خواب میں آیا تھا میرے
دھاڑیں مار کر روتا ہوا
اور نیند سے اٹھ کر ہمیشہ کی طرح رونے لگا میں

بیل ذبح ہو گیا

پھر بازار کے بیچ میں صبح سویرے
بیل کی رسی کھلتی سب لوگوں نے دیکھی
دیکھتے دیکھتے کھال کی کترن کٹ کے
دھڑیوں میں گوشت کو چانپ چانپ بکھیر گئی
اور دیکھتے دیکھتے خلقِ خدا
سب ران گوڑ کو چتون چتون چاٹ گئی