غیر حاضر مالک مکان

غیر حاضر مالک مکان

شاعر ۔ چارلس سیمیِچ
ترجمہ ۔ حسین عابد

یقینآ آسان کر سکتا ہے وہ
مسئلہ جب یہ ہو
کہ ہمیں اس کا اتا پتا معلوم ہو
لگام دے سکتا ہے ہمارے تخریبی شکوک کو
ٹھنڈا کرسکتا ہے ہمارے بلند بانگ غصے کو

وہ چاہے تو ہمیں اکیلا نہ چھوڑے
اس عجیب وغریب احساس میں
جو آ لیتا ہے ہمیں کبھی کبھی
کہ کوئی بڑا مقصد پوشیدہ ہے
یہاں ہمارے قیام میں
جہاں کچھ بھی ٹھیک نہیں
اور ہر شئے کی مرمت ہونے والی ہے

کم از کم وہ ایک تختی تو لگا سکتا تھا
’’ کاروباری دورے پر روانہ‘‘
جسے ہم دیکھ سکیں
قبرستان پر، جس کا کرایہ وہ وصول کرتا ہے
یا رات کے آسمان پر
جس کے نام ہم اس کی شکایتیں بھیجتے ہیں

Image: Nguyen Thai Tuan

Did you enjoy reading this article?
Subscribe to our free weekly E-Magazine which includes best articles of the week published on Laaltain and comes out every Monday.
Hussain Abid

Hussain Abid

Poet and Musician Hussain Abid, was born in Lahore and is currently living in Germany. His poetry collections; "Utri Konjain", "Dhundla'ay din ki Hidat" and Behtay Aks ka Bulawa" have been praised by the general audience and the critics alike. Hussain Abid collaborated with Masood Qamar to produce "Kaghaz pe Bani Dhoop" and "Qehqaha Isnan ne Ejad kia". Abid's musical group "Saranga" is the first ever musical assemble to perform in Urdu and German together.


Related Articles

گناہ گار شاعر کی بے گناہ نظمیں

حفیظ تبسم: کل میری دو نظمیں بازار گئیں
(جو جڑواں بہنیں تھیں)
مگر واپس نہیں لوٹیں

موت کو پڑھنا آسان نہیں

نصیر احمد ناصر: لفظوں اور منظروں کی خود کشی کے بعد
زندگی کو چُپ سی لگ گئی ہے

عہدِ وسطیٰ کے شاعروں کے نام ایک غنائیہ

جو شعر در شعر کہے بہ راہے مدح سرائی
بہ اندازِ رعد خوش گذران مہینہِ جُون جب شجر ارغوان ہو پورا کِھلا،
لیکن یہ علم میری زبان گنگ کرائے کہ
تم لوگوں نے اسے کیسے اندازِ گراں قدر صنّاعی سے موزوں کیا ہوگا۔