پُرسہ

پُرسہ
پُرسہ
کچے ماس کی باس آتی ہے
اجلے خواب کے دروازے میں کتوں کی بھونکار بچھی ہے

پُرسہ دارو!
پُرسہ داری کتنا مشکل کام ہے
یعنی کہر ذدہ خاموشی کے زنگار میں لپٹی "یکتائی" پر فقرے کسنا
خبروں میں ان تابوتوں کی گنتی کرنا
جن میں ٹھونکی جانے والی میخیں
مریم کے بیٹے کے خون پہ اتراتی ہیں
وقفے وقفے سے غالب کے سوندھے شعر کی خوشبو پینا
سوشل سائٹ پر اونگے بونگے شعر کی کِھلی اڑتے دیکھ کے ہنسنا
ہنسنا زور سے ہنسنا
"جیسے پاگل ہنستے ہیں"
گاہے گاہے رو بھی دینا
اور سو جانا
پُرسہ داری، کتنا مشکل کام ہے
پرسہ دارو!!!!
Did you enjoy reading this article?
Subscribe to our free weekly E-Magazine which includes best articles of the week published on Laaltain and comes out every Monday.

Related Articles

بچا کھچا دیس

سکون
شہر سے کوچ کر گیا ہے
اور
پیچھے رہ گئی ہیں
کچھ
بوری بند لاشیں

تماشا

علی زیرک: ہمیں لجلجاتے چناروں سے آگے تساہل بھری کھیتیوں سے گزر کر
فصیلوں کی فصلوں میں چھپنے سے پہلے
دھوئیں کی لچکدار دیوار کو چاٹنا ہے

آج بھی ہر روز کی طرح

ممتاز حسین: فال نکالنے والے طوطے نے
دل کی لکیر ڈھونڈ کر
مشورے کے لفافے میں
بند کر کے مجھےتھماتے ہوئے کہا
تمہارے دل میں جو سوراخ ہے
اس لکیر سے بھر دو