پُر کشش خاتون اور شاندار اداکارہ: انجلینا جولی

پُر کشش خاتون اور شاندار اداکارہ: انجلینا جولی

'بدن کی بینائی' سلسلے کی مزید تحاریر پڑھنے کے لیے کلک کیجیے۔

ہالی وڈ کی فلمی صنعت میں خوبصورت چہروں کی کمی نہیں ہے، لیکن نظر کو اچھے لگنے والے چہرے کم کم ہوتے ہیں، وہ چہرے جن کو دیکھتے ہی دل شاداب ہوجائے۔ ہالی ووڈ میں انجلینا جولی ایسا ہی ایک پُر کشش اور حسین چہرہ ہے۔ اس کے لیے کردار منتظر ہوتے ہیں، وہ جس کردار کا لبادہ پہن لے، پھر وہ کسی اور کا نہیں رہتا، اسی طرح، جس کو وہ نظربھر کے دیکھ لے، وہ پھر کہیں کا نہیں رہتا۔
یہی اس کی کشش کا کمال ہے، وہ حسین ہے مگر باوقار بھی۔ اس نے زندگی کی صعوبتوں سے لے کر، گلیمر کی راحتوں تک، سب کچھ اپنی صلاحیتوں کے بل بوتے پر حاصل کیا ہے۔ اس کا شمار حسین عورتوں کی اس قسم سے ہے، جن کے دل میں دوسروں کے لیے بھی سچادرد ہوتا ہے، یہی وجہ ہے، اس نے انسانیت کی خدمت کے لیے زندگی کا ایک بڑاحصہ وقف کر رکھا ہے۔

انجلینا نے زندگی کا بڑا حصہ انسانیت کے لیے وقف کر رکھا ہے

انجلینا جولی کا آبائی وطن امریکا ہے۔ اس نے شہرت کی بلندیاں چھونے سے پہلے، زندگی کے سارے نشیب بھی دیکھے۔ گھر میں بھوک اورزمانے میں سفاکی دیکھی، صرف یہی نہیں بلکہ زندگی جن رشتوں کی وجہ سے خوبصورت ہوتی ہے، ان کو ٹوٹتے ہوئے بھی دیکھا۔ والدین کے رشتے میں پڑنے والی دراڑ نے، اس کی روح میں بھی شگاف ڈالا۔ زندگی میں تین بار محبت کی۔ دوتجربات نے مایوس کیا،تیسرے سے محبت اور پھر شادی ہوئی، وہ بریڈپٹ ہے، اس سے جوڑا ہوا تعلق اب ٹوٹ چکا ہے ہے۔ اپنے حقیقی بچوں کے علاوہ لے پالک بچے بھی اس کی زندگی کی اہم کڑی ہیں۔

بچے انجلینا کی زندگی کی اہم کڑی ہیں

ہالی وڈ کی مہنگی ترین اداکارہ ہونے کے ساتھ ساتھ انجلینا جولی اقوام متحدہ کی طرف سے مہاجرین کی خیر سگالی کی سفیر بھی رہی ہے۔ پاکستان سمیت دنیا بھر میں آفت زدہ علاقوں کا دورہ کرچکی ہے۔ 2005 کے زلزلے اور2010میں سیلاب کے موقع پر وہ پاکستان بھی آئی، جب اس نے متاثرین کے لیے فنڈز اکٹھے کیے، اپنی آمدن سے بھی ایک خطیر رقم پاکستانیوں کو بطور امداد دی اور اس حیرت کا بھی اظہار کیا، اس غریب ملک کے حکمران کتنی عیاشی کی زندگی گزارتے ہیں۔

انجلینا جولی کو اداکاری کی صلاحیتیں اپنے والدین سے ورثے میں ملیں۔ اداکاری کاآغاز اپنے والد کے ساتھ ایک چائلڈ رول سے کیا۔ اس کے والد کا نام Jon Voightتھا، جبکہ والدہ کا نامMarchelineتھا۔ 1982 کی دہائی سے انجلینا جولی کی یہ چھوٹی سی کوشش اسے اداکاری کی طرف لے آئی اوراس نے 1993میں بننے والی فلم Cyborg 2سے کیرئیر کا باقاعدہ آغاز کیا۔ 1995 میں پہلی مرتبہ ایک فلم Hackersمیں مرکزی کردار نبھایا۔ اس کے علاوہ Mojave Moon، Foxfire، True Women نامی فلموں میں کام کرکے اپنے کیرئیر کو آگے بڑھایا۔

1997 میں ٹیلی ویژن کے لیے 3فلموں میں کام کیا، جن کانامGeorge Wallace، Playing God، Gia تھا۔ 1999 میں، اس نے اکیڈمی ایوارڈ برائے بہترین معاون اداکارہ جیتا، مگر ابھی اس کی آزمائش ختم نہیں ہوئی تھی، اتنا کام کرنے کے باوجود یہ مخصوص حد سے آگے نہ بڑھ سکی۔ نئی صدی کا آغاز اس کے کیرئیر میں نئے موڑ کی ابتدا تھی۔ اکیسویں صدی نے اس پر نئی دنیا کا دروازہ کھولا، جہاں اس کے لیے کامیابیاں تھیں، گلیمر تھا اور بہت ساری شہرت بھی۔

انجلینا ہالی وڈ کی مہنگی ترین اداکاراؤں میں شامل ہیں

2001 میں ہالی ووڈ کی مشہور زمانہ فلم Lara Croft:Tomb Raider میں لاراکرافٹ کا کردار نبھایا، یہاں سے اس کو عالمی شہرت مل گئی۔ اس کے بعد اس کا شمار دنیا کی مہنگی ترین اداکارائوں میں ہونے لگا۔ 2003 میں اسی فلم کا سیکوئل بھی بنا، 2005 میں ریلیز ہونے والی فلم Mr and Mrs Smith نے اس کو کامیابی کے ساتھ ساتھ بریڈ پٹ جیسا بہترین دوست اور شوہر بھی دے دیا۔یہ بچپن میں بہت فلمیں دیکھتی رہی ،دو سال تک ایک تھیٹر انسٹی ٹیوٹ Lee Strasberg سے تربیت بھی حاصل کی اورتھیٹر میں عملی طورپر پرفارم بھی کیا، یہ سب کچھ اس کی عملی زندگی میں بہت کام آیا۔

بریڈ پٹ سے محبت کرنے والی انجلینا جولی کو، پہلی محبت 14سال کی عمر میں ہوئی تھی، لیکن اس محبت میں 2سال بعد ہی جدائی آگئی۔عمر کا 20واں سال اس کی زندگی میں ڈپریشن سے بھرا ہوا سال تھا، اس نے سوچوں کی اذیت سے چھٹکارا پانے کے لیے منشیات کا سہار الیا، مگر ناکام رہی ، آخرکارحقیقی زندگی سے راہ فراراختیار کرنے کی غرض سے خود کوفلم اورفیشن کی بناوٹی اورجعلی دنیا میں غرق کر دیا۔ محرومیوں کی شکار، یہ بے چین روح مختلف رشتوں میں محبتیں ڈھونڈتی رہی، اس کی محبت کا چشمہ صرف مرد ساتھی اداکاروں کے لیے نہیں بلکتا رہا، بلکہ ایک خاتون ماڈل اورا داکارہ Jenny Shimizu سے شدید محبت کی۔ سگے بھائی کے ساتھ بوس وکنار کے تنازعہ پر بھی اس کو مخالفت کا سامنا کرناپڑا، لیکن اس نے زندگی وہ سب کیا،جس کی اسے چاہ تھی۔
دنیا کی پرکشش خاتون کا لقب حاصل کرنے والی انجلینا جولی نے دنیا بھر کے سفر میں جو کچھ مشاہدہ کیا، اس کو کتابی شکل دی۔ اس کتاب کا نام Notes From My Travels ہے۔ اس میں بھی کوئی شک نہیں ،انجلینا جولی نے دنیا کی سنگین اور تلخ حقیقتوں کا ادراک کرنے کے بعد دکھی اور بے سہارا لوگوں کے لیے بے پناہ مصروفیا ت سے، ان کے لیے وقت نکالا۔ جولی پٹ فاؤنڈیشن بنائی۔

دل پھینک انجلینا جولی نے 2000 سے لے کر اب تک کئی ایک فلموں میں کام کیا، جن میں زیادہ ترباکس آفس پر کامیاب فلمیں رہیں۔ 2007 پاکستان میں قتل ہونے والے امریکی صحافی’’ ڈینئل پرل‘‘ پر بننے والی فلم ’’A Mighty Heart‘‘ کے حقوق، اس کے شوہراورہالی وڈ کے معروف اداکاربریڈپٹ کے فلم ساز ادارے نے حاصل کرلیے تھے۔ اس فلم کی شوٹنگ کراچی میں ہونی تھی، لیکن پاکستان کے خراب حالات کے باعث ، اس کی عکس بندی بھارت میں ہوئی۔ پاکستان اوربھارت میں اس فلم میں کام کرنے کے لیے مقامی اداکاروں کے آڈیشنزکیے گئے، جس میں بڑے بڑے اداکار قطارمیں لگے ہوئے تھے، شاید ان کو یہ موقع مل جائے،آخرکار پاکستان سے عدنان صدیقی، ساجد حسن ،علی خان اوربھارت سے عرفان خان کو اس فلم میں انجلیناجولی کے ساتھ کام کرنے کا موقع ملا۔

انجلینا اور بریڈپٹ کی جوڑی ہالی وڈ کی خوبصورت ترین جوڑی سمجھی جاتی تھی

انجلینا جولی نے فلموں میں اداکاری کرنے کے ساتھ ساتھ فلمیں پروڈیوس بھی کرنا شروع کیں، جن کی بدولت اس کا ایک مخفی مگرشاندار پہلو سامنے آیاکہ وہ دنیا کے اہم موضوعات کے متعلق کس طرح سوچتی ہے، اس کی ایک مثال فلم’’Unbroken‘‘ہے، جس میں دوسری جنگ عظیم کے تناظرمیں ایک امریکی پائلٹ کو جاپانیوں کی قید میں دکھایا گیا ہے۔ یہ فلم انجلینا جولی کی ہدایت کاری کی اعلیٰ ترین مثال ہے۔ اس کی کامیابیوں کا سفر تا حال جاری ہے اور حسن کی کثیر دولت کا بھی، جو تیزرفتاری سے خرچ ہو رہی ہے اورکم بھی۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
خرم سہیل سے رابطہ کیجیے:khurram.sohail99@gmail.com

Did you enjoy reading this article?
Subscribe to our free weekly E-Magazine which includes best articles of the week published on Laaltain and comes out every Monday.
Khurram Sohail

Khurram Sohail

Khurram sohail is a journalist and researcher. He regularly writes on performing arts and literature for various magazines, newspapers and websites. Several books containing his writings on music, art and literature have been published. Readers can contact him at: khurram.sohail99@gmail.com


Related Articles

شوبز کی ترک شہزادی؛ بیرین ساعت

خرم سہیل: عشق ممنوع کو جب ترکی میں نشر کیاگیاتو اس نے ترکی ٹیلی ویژن کی ڈرامے کی تاریخ کے سارے ریکارڈ توڑدیے تھے۔

اطالوی حسن کی مکمل داستان:صوفیہ لورین

خرم سہیل: اطالوی فلم سے بہترین اداکارہ تسلیم کیے جانے والی صوفیہ لورین نے اٹلی میں بھی اسی فلم کے ذریعے وہاں کے مستند فلمی ایوارڈزبھی اپنے نام کرکے تہلکہ مچادیا۔

خوبصورتی کی سفیر۔۔۔ کارلا برونی

خرم سہیل: فیشن کی دنیا اور سیاست کے منظر نامے کو دیکھا جائے، تو حسن کی جامع تعریف اور خوبصورتی کی تشریح ’’کارلا برونی ‘‘ہو گی۔