چُندھا

چُندھا

اگر کوئی اچانک روشنی کر دے
تو کیا تم دیکھ پاؤ گے؟
وہ سب چیزیں
جو تاریکی کے گہرے اسودی
محلول میں گم ہیں
سراپا زندگی کا،
موت کا چہرہ،
اداسی کا بدن،
آواز کے لب،
درد کے ڈِمپل،
خوشی کے مرمریں پاؤں،
محبت کی حنائی انگلیاں،
آفاق زلفوں کے،
خدا کا سرمدی سایہ ۔۔۔۔۔۔

اگر کوئی اچانک روشنی کر دے
تو کیا تم دیکھ پاؤ گے
ابد کی دھند میں لپٹی
ازل سے منتظر
آنکھیں کسی کی ۔۔۔۔۔۔؟

Naseer Ahmed Nasir

Naseer Ahmed Nasir

Naseer Ahmed Nasir is one the most eminent, distinct, cultured and thought provoking Urdu poets from Pakistan. He is considered as a trend setter poet of modern Urdu poems among his contemporaries. His poetry has been translated into various languages and has several poetry collections to his credit. A lot of his work is yet to be published.


Related Articles

خاموش۔۔۔۔خبردار

یہ جسم نہیں روح ہے
اور ہزاروں، لاکھوں، کروڑوں جسموں میں چکر کاٹتی رہتی ہے
مگر پھانسی کے پھندے میں سماتی نہیں ہے : نورالہدیٰ شاہ

میں خود کو پکارنا چاہتا ہوں

سدرہ سحر عمران:میں نہیں جاننا چاہتا
کہ مجھے کس نے گلی کے کونے میں دیکھا تھا؟

شاعری میری ضرورت ہے

قاسم یعقوب: شاعری میری پہچان بننے سے زیادہ
میری ضرورت کو پورا کرتی ہے
میرا شاعری سے وہی تعلق ہے
جوکسی بھیڑ کا اپنی اون سے ہوتا ہے