اجنبیت سے بھرا دن (ثاقب ندیم)

اجنبیت سے بھرا دن (ثاقب ندیم)

اجنبیت سے بھرا دن
اہم شخص کو غیر اہم بنا سکتا ہے
میں ایک اجنبی دن کے اندر سے گُزرا
جہاں خاموشی
کمرے کی درزوں سے بہہ رہی تھی
جہاں تمہاری آنکھوں میں
ایک اجنبی اداسی تھی
یہ میرا پہلا تعارف تھا
اُس لہجے سے
جِس میں اجنبی دن بولا کرتے ہیں
اور پاس سے گزرتے پاؤں کی آہٹ
دل دہلا سکتی ہے
اجنبیت بھرے دن میں
اجنبی رنگوں کی گِنتی
آپ کو پورا دن مصروف رکھ سکتی ہے
آپ اپنی گنگناہٹ میں بہت آسانی سے
بیڈار سُر کا اضافہ کر سکتے ہیں
اور مکمل مصروف رہ کے
اپنے آپ کو
دھوکا دینے کی پریکٹس کر سکتے ہیں
اجنبیت بھرا دن گزارنے کی خاطر
Image: Tadas Zaicikas


Related Articles

شہر

شہر، اگرچہ ایسا کوئی یقین نہیں رکھتا
سب کو خوش آمدید کہتا ہے، جیسے وہ اکیلا آیا ہے۔
ضرورت کی فطرت دکھ کی طرح
بلکل ہر ایک کے اپنے مُطابق ہوتی ہے

نارسائی کی دسترس

زمین سے آسمان تک کی مسافتوں کی کسے خبر ہے؟
رسائی ہو جائے تو غنیمت
نہ ہو سکے تو
یہ نارسائی بھی اپنی نظروں میں معتبر ہے

ریت کے دیس میں

مصطفیٰ ارباب: ہم ایک جگہ سے معدوم ہوکر
دوسری جگہ تجسیم پاتے ہیں
انسانی ٹِیلے
ہمیشہ متحرک رہتے ہیں

No comments

Write a comment
No Comments Yet! You can be first to comment this post!

Write a Comment

Your e-mail address will not be published.
Required fields are marked*