Posts From Ghani Pahwal

Back to homepage
Ghani Pahwal

Ghani Pahwal

خوابوں کا اغوا (غنی پہوال)

مجھ سے ملئیے مجھے زندگی کی مزدوری پر لگا دیا گیا ہے میرا تعارف یہ ہے کہ اغواہ شدہ خوابوں کے لواحقین میرے کنبے میں شامل ہیں میرے اجداد احتجاج کرتے کرتے نابود ہو گئے میرا ماضی ایک پُر اسرار

Read More

درخواست (غنی پہوال)

خواہش کی سوکھی ٹہنی جب بھوکی چڑیا میں تبدیل ہوکر مرگئی تو مجھے آنسوؤں کا جنازہ بنا کر تم کسی ویرانے میں دفن کر آئی مگر جب چاہت بھری تمہاری آنکھوں کے وسیع صحن میں امید کے پودوں میں پھول

Read More