Posts From Shabbir Rakhshani

Back to homepage
Shabbir Rakhshani

Shabbir Rakhshani

Shabir Rakhshani has been working as a Journalist for last ten years. He is currently working as News Editor at haalhawal.com.

"حال حوال" بلوچستان میں آن لائن صحافت کا نیا باب

شبیر رخشانی: بلوچستان سے متعلق بامعنی اور مہذب علمی مکالمے کا فروغ "حال حوال" کا بنیادی مطمع نظر ہے۔
Read More

رویوں کو بدلیں تو کیسے؟

اگر کوئی اچھا کام بھی کر رہا ہے تو ہم ذاتی رنجش یا شخصی اختلاف کی بناء پر اسے پوری دنیا کے سامنے چھوٹا ثابت کرنے کے لیے کوشاں رہتے ہیں۔
Read More

بے اعتمادی کی فضاء کیسے ختم کی جائے؟

اقتصادی راہداری کا آغاز عدم اعتماد کی فضا میں ہو رہا ہے، جہاں پنجاب کے سوا تینوں صوبے اور گلگت بلتستان اپنے تحفظات اور خدشات کا اظہار کر رہے ہیں۔
Read More

لاچار بلوچ خواتین اور بینظیر انکم سپورٹ پروگرام

ہم یہ تسلیم کرنے کو تیار نہیں ہوتے کہ ہم نے، ہماری روایات نے اور ہمارے معاشرے نے عورت کو تعلیم اور ہنر سے محروم رکھا ہے جس کی وجہ سے وہ آج اس حال میں ہے۔
Read More

مسیحا کا قتل

ایک ایسے معاشرے میں جہاں ڈاکٹر بڑے شہروں، بڑے ہسپتالوں او ر دوسرے ملکوں کا رخ کرتے ہیں ڈاکٹر شفیع جان بلوچ نے آواران جیسے پسماندہ علاقے میں رہنے کا فیصلہ کیا مگر بلوچستان کے حالات ان کی جان لینے کا باعث بن گئے۔
Read More

رحم کیجیئے عالیجاہ

اسے ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ کی خوش قسمتی کہیں یا بدقسمتی کہ انہوں نے ایک ایسی اتحادی حکومت کی سربراہی کا راستہ چنا جس کے پاس نہ اختیارات تھے نہ پوری مدت۔ نواب ثناء اللہ زہری جیسا قد آور قبائلی سردار

Read More

تبدیلی کیوں نہیں آتی

عام آدمی نے تبدیلی چاہی تو سیاستدان کی روپ میں بھانت بھانت کے رہنما میدان میں آگئے، سماجی ادارے وجود میں آگئے، ٹھیکداری نظام متعارف کرایا گیا، میڈیا بھی آگیا لیکن معاشرہ آج بھی اتنا ہی پسماندہ ہے۔
Read More

زمینی خوبصورتی اور انسانی کردار

آس پاس چند درخت ایسے بھی نظر آئے جنہیں سڑک کی توسیع کی خاطر کاٹ کر زمین سےاس کی خوبصورتی چھین لی گئی تھی۔ چند دیوہیکل مشینیں اس ززمین کو روندنے اور تارکول بچھا کر ان درختوں کا نام و نشان مٹا دینے کو تیار کھڑی تھیں۔
Read More

اکیسویں صدی کا ٹڑانچ

ٹڑانچ میں اکیسویں صدی ابھی تک نہیں پہنچی اس کے باسی آج بھی انیسویں صدی کے باشندے لگتے ہیں اور اسی میں جی رہے ہیں۔
Read More

یہ بی بی سی لندن ہے

"یہ بی بی سی لندن ہے اب آپ رضا علی عابدی سے خبریں سنئیے" اپنے دور کی خوبصورت آواز کے ساتھ ایک خوبصورت نام ۔۔۔ خبریں سننے کے لئے شائق سامعین کی ایک بڑی تعداد ریڈیو کے گرد جمع ہونا شروع کردیتی تھی۔
Read More

اقتصادی راہداری اور تربت روڑ

"تربت روڑ“ کہلانے والی سڑک اکیسویں صدی سے پہلے تربت کو آواران اورپھر ان دونوں اضلاع کو کراچی سے ملانے کا اہم ذریعہ تھی۔
Read More

بیروزگاربلوچوں کا خون مت نچوڑو

بلوچستان کے عوام اپنے بچوں کو تعلیم دلانے کے لیے ہمہ وقت کوشاں رہتے ہیں۔ حصول علم کے لیے تربت ،گوادر، چمن، آواران، خاران، پنجگور، نصیرآباد اور دیگر علاقوں کے نوجوان کراچی، لاہور، اسلام آباد جیسے دور دراز شہروں کا رخ کرتے ہیں۔
Read More

بلوچستان؛احساس محرومی اور عوامی نمائندے

اسلام آبا د میں بلوچستان ہاؤس کی عمارت پر لکھا بلوچستان ہاوس بڑی مشکل سے دکھائی دیتا ہے۔ب
Read More

روزگار کے اشتہارات اور بے روزگار نوجوان

یہ رش پرنس روڑ پر واقع ایک فوٹو کاپی کی دکان پر ہے جہاں نوجوانوں کی ایک بڑی تعداد اشتہارات کی نقول کے حصول کے لئے دھکم پیل میں مصروف ہے۔
Read More

بلوچ، بلوچستان اور اردو زبان

عالمی اردو کانفرنس کا ساتواں کنونشن آرٹس کونسل کراچی میں اپنے اختتام کو پہنچ چکا ہے اور کئی ممالک سے کنونشن میں آئے اردو کے چاہنے والے کراچی سے واپس لوٹ چکے ہیں۔
Read More