Posts From Tasneef Haider

Back to homepage
Tasneef Haider

Tasneef Haider

Tasneef Haider is running Adabi Dunya. He is working as a freelance scriptwriter and trying to promote Urdu literature through internet.

ایک خود روپھول کے مشاہدے کا قصہ (تصنیف حیدر)

میں بارہ بنکی پہنچا تو رات ہو چکی تھی، اپنے کمرے تک جاتے اور بستر پر دراز ہوتے ہوتے قریب ساڑھے بارہ بج چکے تھے۔میں بے حد تھک گیا تھا، پچھلے سات گھنٹوں کا سفر، گاڑی بھی خود ہی ڈرائیو

Read More

جگہ خالی ہے (تصنیف حیدر)

میں اس خوبصورت سی لکڑی کی بینچ پر بیٹھ کر قریب پچیس ہزار بار خود کو سمجھا چکا تھا کہ سب کچھ ٹھیک ہو جائے گا۔ مگر سمجھانے اور یقین دلانے میں جو باریک سا فرق تھا، وہ مجھ پر

Read More

پردے کی صفت (تصنیف حیدر)

پردہ داری انسانی فطرت ہے، انسان پردہ کرتا ہے یا شاید پردہ ڈالتا ہے، ان تمام چیزوں پر جو اسے دکھانا ٹھیک نہیں معلوم ہوتیں یا اور زیادہ نفسیاتی توجیح کیجیے تو جن کو دکھانا برا یا معیوب سمجھا جاتا

Read More

محبت کی گیارہ کہانیاں (چھٹی کہانی)

تصنیف حیدر: ہر بار سمندر کی جو لہر آتی، میں اس پر کود کر کسی جنگلی بھوکے اژدہے کی طرح حملہ کرتی اور پھر اس کے زور سے بہت دور تک کھلکھلا کر واپس پلٹتی ہوئی آتی۔

Read More

محبت کی گیارہ کہانیاں (پانچویں کہانی)

تصنیف حیدر: نصرت اور میں فارغ اوقات میں خوب باتیں کیا کرتے تھے، میں اسے اپنے تازہ افیئرز کے بارے میں بتایا کرتی اور وہ مجھے پڑھائی لکھائی، گھر بار، کیمپس اور ہاسٹل کے بورنگ مسئلے اپنے بھولے بیانیے کے ساتھ سنایا کرتی، جنہیں میں قہقہے مار مار کر سنا کرتی تھی۔

Read More

محبت کی گیارہ کہانیاں (چوتھی کہانی)

تصنیف حیدر: اگر اس دھرتی پر کوئی آخری پودا بھی چائے کا بچ جائے تو میں اپنے وجود کی جنگ کے لیے لوگوں کو قتل کرکے بھی اسے حاصل کرنے کی جدوجہد کرسکتی ہوں۔

Read More

محبت کی گیارہ کہانیاں (تیسری کہانی)

تصنیف حیدر: میں بی اے سکینڈ ائیر کی طالبہ ہوں اور اب میں کلاس میں جارہی ہوں ، جو میرے اونگھنے اور باہر دیکھتے رہنے کی سب سے پسندیدہ جگہ ہے۔

Read More

محبت کرنے والے کم نہ ہوں گے

تصنیف حیدر: ویلنٹائن ڈے محبت کے بارے میں سوچ سمجھ کر رائے قائم کرنے کی گھڑی ہے ،جو ہمیں ہماری تمام تر مصروفیت کے باوجود یہ سوچنے کا موقع دیتی ہے کہ محبت کا یہ خاص دن منانے کے لائق کیسے بنا جائے۔ورنہ تو ہماری سوسائٹی میں محبت کرنے والوں کی نہ کوئی کمی ہے، نہ کبھی ہوگی۔

Read More

کہانی کیا کہتی ہے

تصنیف حیدر: فلسفہ بھی ہو، بیانیہ بھی، مگر کہانی گم نہیں ہونی چاہیے۔

Read More

آدمی قید ہے

تصنیف حیدر: آدمی قید ہے
وقت میں، خون میں، لفظ میں
آدمی قید ہے

Read More

محبت کی نظمیں (حصہ اول)

تصنیف حیدر: رات
اس کی نظمیں سنتے گزری
جیسے سیاہ آنئوں پر نیلی روشنیوں
کا رقص ہو

Read More

محبت کی گیارہ کہانیاں (پہلی کہانی)

تصنیف حیدر: اکیلا آدمی موت کی طرح بے ضرر ہوتا ہے، اس کے پاس آر یا پار گزر جانے کی طاقت ہوتی ہے، ہواؤں ، دشاؤں اور فضاؤں میں پرپھیلانے کا حوصلہ ہوتا ہے۔

Read More

خودکشی اور میں

تصنیف حیدر: میرے لیے خودکشی کا بہترین واحد ذریعہ عورت ہی ہوسکتی ہے اور میں اسے اپنے قاتل کے روپ میں نہ دیکھتے ہوئے، محسن کے طور پر دیکھنا زیادہ پسند کرتا ہوں، خواہ وہ مجھ سے نفرت کرکے میرے سینے میں گولیاں ہی کیوں نہ اتار رہی ہو، کسی کے ساتھ مل کر بے وفائی کرنے کے چکر میں میری جان لینے کی فکر کیوں نہ کرے۔

Read More

نظم (تصنیف حیدر)

تصنیف حیدر: خودکشی حرام نہیں
بلکہ ایمان کی پہلی شرط ہے

Read More

زمینی اور آسمانی خواہشوں سے گندھی لڑکی

تصنیف حیدر: فاطمہ سے میرا تعلق دھیرے دھیرے بنا، جیسے کوئی ہرن دشت میں اگ آنے والے پانی کی طرف آہستہ آہستہ بڑھتا ہے، کانوں کو پھیلائے ہوئے، پتوں کی سرسراہٹ اور ذرا سی بھی کھسر پھسر پر دھیان جمائے ہوئے۔

Read More