باغ و بہار میں موجود اردو کے دلچسپ الفاظ اور ان کے معنی

باغ و بہار میں موجود اردو کے دلچسپ الفاظ اور ان کے معنی

صانع (بنانے والا)،تس(اس)،بتاشا(جلد مٹنے والا)،کسو(کسی)،زری زر بخش(سخی)،ماندی(مضمحل)،ٹھیٹھ(خالص)،آنول نال(پیدا شدہ بچے کی نال کی جڑ)،اشر ف البلاد(میڑو سٹی)،مرفہ(خوش)،صبح خیزے(چور)،نعل بندی(ٹیکس)،تار مقیش(سفید بال)پائیں باغ( مکان کےنچلے یا پچھلے حصے کا باغ)،مجرائی(سلام کرنے والا)،محلی(جو محل میں رہے)،تہلک(فساد)،خانہ زاد موروثی(گھر میں پرورش پانے والا)،خاطر جمع(اطمینان)،ہیژدہ(اٹھارہ)،جوگا(لائق،قابل)،فدوی(غلام)،راتب(روازانہ کی خوراک)،انند(خوشی)،کورنش(سلام)،پیکھنا(نظر کا دھوکا)،کفنیان(فقیروں کے گلے میں پہننے کا کفن نما لباس)،ٹھیپ(ایک برتن جس میں فقیر آگ رکھتے ہیں)،گمت(مجمع)،گماشتے(نائب، ایجنٹ، کارندہ)،چاو چوز(عیش و آرام)،فراش(انٹیریر ڈیکوریٹر)،دیدارو(خوش شکل)،پھانکڑ(فریبی)،مفت بر(لٹیرا)،کیتکی(ایک خوشبو دار پودہ،جس کی شراب بنتی ہے)،ور خرچ(فضول خرچ)،ڈھلیت(چوکیدار)،ثابتخانی(سکیورٹی گارڈ)،دمڑی(پیسے کا چوتھائی)،ٹھڈیاں(اناج کی بالی)،ماجائی(بہن)،قلیا (سادہ گوشت کا گھی میں بھنا سالن)،تصدیع(تکلیف)،بیرن(بھائی)،سینا(پڑ جانا)،توڑا(ایک ہزاراشرفی کی تھیلی)، لوانا(اٹھوانا)،ہرنا(کاٹھی کا اگلا ابھرا ہوا حصہ)،چھاگل(مشکیزہ)،زین پوش(غاشیہ،چادر)،خورجی(زین کا تھیلا)،درمن(علاج)،انگور(کھرنڈ)،وام(قرض)،کلجھواں(سانولا،بے رونق)،شقہ(خط)،ترپولیا(سہ درہ)،پھینٹا(معمولی رومال جو مزدور سر پر باندھتے ہیں)،زربفت(ایک کپڑا جو سونے اور ریشم کے تاروں سے بنتے ہیں)،تورہ پوش(طشتری وغیرہ کو چھپانے والا کپڑا)،بدرہ(تھیلی)،مونڈھا(ایک قسم کی گول کرسی)،بلور(ایک جوہر جو شیشے سے سخت اور زمرد سے نرم ہوتاہے)،چلون(تیلیوں کا بنا ہوا پردہ)،پنڈ(بدن)،حیص بیص(کشمکش)،یساول(پہرے دار)،ٹھلیا(چھوٹا گھڑا)،بجھرا(غلہ)،شورہ (ایک گھانس کا نام)،خوزادی(مالکن)،چوڈول(پالکی سے مشابہ ایک سواری)،پشواز(انگرکھے کی وضع کا گھیر دار دامن کا لباس)،سنجاف(ریشم یا گوٹے کی چوڑی گوٹ)،مغرق(جگمگاتا ہوا)،پھساہندا(بدبودار)،روہت(تازگی)،قارورہ(شیشہ)،انگا (بچوں کی نگرانی پر معمور ملازمہ)،ورق الخیال(بھنگ)،کھب جانا(گڑ جانا)،رونہ(غلام)،ندان(آخر کار)،فحوا(مطلب)،قبالہ (مکان)، بھچنپا(ایک قسم کا خوشبو دار پودہ)،چبلا(چھچھورا)،بھوبھل (راکھ)،قلماقنی(محلوں میں پائی جانے والی ہتھیار بندملازمہ)،مرکب(سواری کی چیز)،انچت (اچانک)،نپٹ(بالکل)،دلق(کمبل)،کواکب(تارے)،قرق(کسی امر یا شئے کی ممانعت)، ٹنڈی(نال)، ،مدارالمہام(منتظم)،قیافہ(فال، شگون)،تملق(چاپلوسی)،بکاول(پاورچی خانے کا داروغہ)،مشقاب(ایک برتن جس میں آٹا گوندھتے ہیں)،کوکو(ایک قسم کا پاوڈر،قہوہ)،تنکی(پتلی روٹی)،گاودیدہ(روٹی کی ایک قسم)،خاگینہ(انڈے کی بھرجی)،ملغوبہ(مرکب)، شبدیگ(وہ سالن جو رات بھر دم دے کر پکایا جائے)،قبولی(کچھڑی سے مختلف چنے کی دال اور چاول کا ایک پکوان)،برنج(چاول)،پن بھتا(پانی میں ابلے ہوئے چاول)،تمش(تربوز)،آب شورہ(لیمو کا شربت)،لوزیات(بادام کا حلوہ)،مزید کرنا(اٹھانا،بڑھانا)، کاشانی(ایک نہایت عمدہ قسم کا مخمل)، پکھروٹوں(چاندی یا سونے کا ورق)، کھلوریاں(بھنے ہوئے بیج)، پیش گیر(سادی جھالر)،مرگ چھالا(ہرن کی کھال)،چنگیریں(روٹیاں)،لخلخے(قمقمہ،قندیل)،باسن(ہر قسم کا برتن)،بھاٹ(درباری شاعر)،سر پیچ(سر پٹکا)، گوش پیچ(کان پٹکا)،کبت(شعر)، نکھ(ناخن)، سیس(ماتھا)،جٹا(جوڑا)،چھار(تیزاب)، سیوڑا(جینی سادھو)، چھول(چول)، کلول(مصیبت)، کھنڈی(تلوار)،لوبھ(لالچ)،ناتھ(آقا)، تھلکنا(لرزنا)،سیتل پاٹی(گھانس جس سے چٹائی بنتی ہے) ،دیوار گیری(دیوار میں لگائی جانے والی کوئی چیز)،نم گیرے(ایک قسم کا کپڑا)،ادقچہ(کارچوبی اور کلا بتونی کے حاشیے کی چادر)، توشک(گدا)،بجھرے(ملا ہوا غلہ)،بھوئیوں(روٹی جیسی ملائم چیز)،الش(جھوٹا کھانا) ،حلبی(آئینہ)،ابھرن(زیور)، پھیپھڑی(خشکی)، مباف(ربن،چوٹی باندھنے کا کپڑا)،چٹلا(چھوٹا)،جفت(چھلکا)، ہرج مرج(نقصان)،سلخ(چاند رات)،مزاحم(روکنے والا)، تقید(تاکید) ، نمدے (بھگوئے ہوئے)، کریال(تندور نمااناج بھوننے والا گونڈا) ، نواڑے(راکھی)، بجرے(کشتی)،پلوار(کشتی) ، الاق(کشتی) ، پٹیلی(کشتی)،ملاگیر(صندل قسم کی ایک لکڑی)،کونلے(ملائم ٹہنی)،پتر(پتھر)،دسا(ایک قسم کی چادر)،مشقال(ساڑے چار ماشے کا وزن)،ایلچی(پیغام بر)،پذیرا(منظور)،پکھاوج(تال کا قدیم ساز)،رحم(کچے چاولوں کا حلوہ)،اپرالا(مدد)،نیمہ(آدھا)،تارکشی(کڑھائی)،زاد بوم(جائے پیدائش)،زنگی(سیاہ فام)،لنگری(لنگر خانے سےکھانا بانٹنے والا) ،مجوز(تجویز کیا ہوا)،لون(نمک)،کندلا(غار)،شلیتا(ٹاٹ کا ٹکڑا) ،سکھپال(آرام دہ گدے دار پالکی)،تتری(نخرے کرنے والی)،پنڈت خانہ(قید خانہ)،قراول(بندوق سے شکار کرنے والا)،میر شکار(ایک عہدہ جس کے سپرد شکاری جانورں کی نگہبانی ہو)، بازدار(وہ ملازم جو شکاری باز کی تربیت پر متین ہو)،نسقچی(بندوبست کرنے والا)، قورچی(ہتھیار بند سپاہی)، مضاعف(دوگنا) بزازی(کپڑا بیچنے کا کام)، سہائی(مدد کرنے والا)،متر(کپتان)،آدینہ(جمعہ)،شلاق(سلاخ)،تمسک(پکڑنا)،بدرہ(چمڑے کے تھیلی)،پرتل(لادا جانے والا اسباب)،پھڑ(جوئے کا اڈا)،بوزہ(شراب) ، آذقہ(غذا)،پاکھر(بنجر زمین)، نیڑے(قریب)، بھگنا(بھاگنا)،فرسخ(تقریباًڈیڑھ کوس کا فاصلہ)،سلسبیل(بہشت کی ایک نہر)،ننگیا(ننگا)، شلک(لڑکے کا لڑکی والوں کو دیا ہوا جہیز)،غراب(کوا،ایک قسم کی کشتی)،تریا(تارا)،بقچی(باندھنا)،نجھا(غورکر)،ہمیانی(تھیلی)،ہولے(آہستہ)،کوٹ(رنگ وروغن)،النگ(دیوار)،توبڑا(تھیلا)،چماق(لوہے یا لکڑی کا گرز)،آلت(عضول تناسل)،خصیے(انڈے)،کس(آدمی)،کون(پاخانے کاسراخ)،تختہ نرد(کاغذ،پلاسٹک وغیرہ کا چوکور ٹکڑا جس پر نردیں رکھ کر کھیلتے ہیں) ،سم(سوراخ)، کرچھال(چوکڑی)، تکش(ترکش)،قربان(کمان دان)، کھپرا(مٹی کا ٹھیکرا)،دانگ(روپیہ)،سوزنی(اوڑھنے، بچھانے یا پہننے کا دہرا روئی کا کپڑاجس پر سوئی کا باریک کام ہو)،پرچھا(چھوٹا چھپر)،دلمیان(تھیلا)، پرا(گروہ)،خریطہ(تھیلی)،پڑوا(پتوار)، جھلم(کھالر دار نقاب)،کیفی(کیفیت)،گھالا(نقصان)،کوکا(دودھ شریک بھائی)، کٹنی(اینٹ)،دوجی(غیر)،سٹھورا(وہ میٹھاجوزچہ کے واسطے سونٹھ اور میوہ وغیرہ ڈال کر بنایا جاتا ہے)،اچھوانی(چھ دواوں کا حریرہ جو زچہ کو پلایا جاتا ہے)،سلاح(ہتھیار)،اوپچی(ہتھیار بند سپاہی)،بڑچودوا(بکواس کرنے والا)،روبکار(پیشی،سامنا)،کتخدا(گھر والا،شادی شدہ) ، صندلی(صندل کی لکڑی کا)،خم(کجی)،دغدغہ(ڈر) ،سراچوں(پردہ نشین عورتیں)،چارقب(امیروں کا لباس)،دستگی(دستانہ)، کاہلا(بیمار)،شولا(مسالے دار پتلی کھچڑی)،خورش(خوراک)،ٹینٹی(کریل کا پھل جس کا اچار ڈالتے ہیں) ، ٹکڑ(موٹی اور سخت روٹی)، چملے(کاسہ گدائی)،پنگھولا(ہنڈولا)، مہد(بچے کا بستر،بچھونا)

Did you enjoy reading this article?
Subscribe to our free weekly E-Magazine which includes best articles of the week published on Laaltain and comes out every Monday.
Taleef Haider

Taleef Haider

Taleef Haider is a student of M. Phil. Urdu at Jawahar Lal Nehru University. He is a poet and has written many critical essays for various literary magazines.


Related Articles

سُر منڈل کا راجا

پورب پنچھم باجنے والا ایک خدا کا باجا
نام ہمارے بجوائے گا سُرمنڈل کا راجا

" بزرگ گھڑیال "

ابو محمد الوجودی   میں ہر اتوار کی شام عجائب گھر کے باغیچے میں گزارتا ہوں۔ پہلے پہل جب میں

آج کا دوسرا شمارہ؛ تاثراتی جائزہ

• انسانی خلوص ایک نوع کا ڈھونگ ہے، اس کے پیچھے کسی نہ کسی قسم کی کمزوری کام کرتی ہے۔