دی جون ایلیا

ابو بکر: جون پرشور تضادات کا ایسا مجموعہ تھے جس کا کیفتی اظہار صرف شاعری میں ممکن ہے۔ انہوں نے چن چن کر اپنے آپ میں وہ سب جمع کر لیا تھا جس کا بار شعر تو اٹھا سکتا ہے لیکن زندگی نہیں اٹھا سکتی۔

Read More

میں ادب کیوں پڑھتا ہوں؟

تالیف حیدر: ادب ایک بڑا شعبہ ہے۔ زندگی کا بھی اور موت کا بھی۔ لہذا اس کو پڑھنا بھی ہر شخص اور جماعت کے نزدیک ایک الگ تقاضہ رکھتا ہے۔

Read More

خودکشی اور میں

تصنیف حیدر: میرے لیے خودکشی کا بہترین واحد ذریعہ عورت ہی ہوسکتی ہے اور میں اسے اپنے قاتل کے روپ میں نہ دیکھتے ہوئے، محسن کے طور پر دیکھنا زیادہ پسند کرتا ہوں، خواہ وہ مجھ سے نفرت کرکے میرے سینے میں گولیاں ہی کیوں نہ اتار رہی ہو، کسی کے ساتھ مل کر بے وفائی کرنے کے چکر میں میری جان لینے کی فکر کیوں نہ کرے۔

Read More

بھائی صاحب کا مذہب

تالیف حیدر: میں اس کو مذہب سے انحراف پر کبھی کبھی ٹوکتا بھی ہوں، اس سے بحث بھی کرتا ہوں، مگر اس کے اس سفر کو کبھی فراموش نہیں کرتا

Read More

کیا اردو واقعی کوئی زبان ہے؟

تصنیف حیدر:
اردو کے تعلق سے جس قدر بھی نظریات موجود ہیں، ان سے قطع نظر بھارت میں اب سے سو، سوا سو سال پہلے تک اس زبان کو ہندی کے طور پر مقبولیت حاصل رہی ہے
Read More

بھٹو کا پتلا

ڈی اصغر: جب بھٹو کے قصّے کچھ کم ہو جاتے ہیں تو پھر اس کی شیر دل بیٹی کی بات ہوتی ہے۔ جو سب کی بی بی تھی۔ پھر ایک اور نعرہ گونجتا ہے، " چاروں صوبوں کی زنجیر، بے نظیر بے نظیر۔" پھر بی بی صاحب کی مداح سرائیاں ہوتی ہیں۔
Read More

طلاق کی روایت اور مسلمانوں کا رویہ

تصنیف حیدر: طلاق ہرگز بری چیز نہیں ہے، اس کی وجہ یہ ہے کہ جب آپ کسی کے ساتھ زبردستی زندگی گزارتے ہیں، تو اس سے قبل آپ کو یہ یقین کرلینا ہوتا ہے کہ آپ کی ازدواجی زندگی پہلے ہی ختم ہوچکی ہے
Read More

منفی کمیت کی دریافت؟

محمد علی شہباز: اگر طبیعات کے اصولوں اور اس شائع شدہ پرچہ کو بغور دیکھا جائے تو حقیقت کچھ اور معلوم ہوتی ہے۔ جس چیز کو دریافت کیا گیا ہے وہ طبیعات میں کوئی نئی شے نہیں اور نہ ہی ان سائنسدانوں نے "منفی کمیت" کو دریافت کیا ہے۔ بلکہ انہیں ایک تجربے میں ایسی "مؤثرمنفی کمیت" ملی ہے جو اس سے پہلے کسی بوزآئن سٹائن آمیزہ میں نہیں ملی۔
Read More

نظریہِ پاکستان یا نظریہِ حکمران؟

ڈاکٹر زاہد حسین: اولیائے کرام کے مزارات کسی ایک فرق و مکتب نہیں بلکی پوری انسانیت کے لیے دینی و روحانی تسکین اورتکمیلِ حاجات کے مراکز تصور کیے جاتے ہیں، تاہم ان مقامات کو بھی نہ بخشا گیا اوران مزارات میں مدفون اولیائے کرام کے تشخص اور پہچان کو مجروح کرنے کی سازشیں کی گئیں
Read More

ایک پاکستانی ہونے کی قرار داد

توصیف احمد:
ہم اقرار کرتے ہیں کہ ہم پاکستانی ہیں اور پاکستانی ہونے کے لیے ہم دنیا کے دیگر ممالک سے نفرت کرنے، ان کی سرحدوں کے اندر دراندازی کرنے اور انہیں اپنا دشمن خیال کرنے کے پابند نہیں۔
Read More

پی ایس ایل 2017 – پاکستان میں کرکٹ کی واپسی

امن و امان: پہلے ایڈیشن کی طرح پی ایس ایل کے دوسرے ایڈیشن میں بھی کافی جوش و خروش اور بہت سے سنسنی خیز مقابلے دیکھنے کو ملے۔ اس مرتبہ سٹیڈیم آ کر میچ دیکھنے والے تماشائیوں کی تعداد بھی گزشتہ برس کے مقابلے میں دگنی رہی۔
Read More

اٹھتے ہیں حجاب آخر-حصہ چہارم

ڈاکٹر عرفان شہزاد: یہ کون سی عقل مندی ہے کہ تبلیغی حضرات کو ایسے علاقوں اور ملکوں میں تبلیغ کرنے بھیج دیا جاتا ہے جن کی زبان بھی ان کو نہیں آتی۔
Read More

پل بھر کے لیے کوئی ہمیں پیار کر لے، جھوٹا ہی سہی

حمیرا اشرف: جو پیار نہیں کرپاتا، یا جسے کوئی لائق پیار نہیں سمجھ پاتا وہ ایک اور ہی فارمولے پر چل نکلتا ہے۔ ہاں اب سب کو روکنا ہے
Read More

سوشل میڈیا اور جون ایلیا کا زوال

شامل شمس: جون ایک مثال بن تو چکے ہیں لیکن ایک زوال پذیر معاشرے میں۔ فیس بک زدہ شاعر دھڑا دھڑ قافیہ بندی کر رہے ہیں، بے تکی نثری نظمیں کہہ رہے ہیں اور ہر کوئی راشد، فیض اور ناصر بنا ہوا ہے۔
Read More

ادب میں مزاحمتی رویوں کا فقدان

احمد رضا سلیم: پاکستان میں ضیاء دور کا آغاز ادب اور مزاحمتی روئیوں کے لئے مہلک ترین ثابت ہوا۔
Read More