Bulleh for our times

Mystifying is the turn of time, indeed. Refuted by clerics of his time, the same Bulleh Shah who was refused burial in his community graveyard is quoted by contemporary mullahs and holds worldwide reverence today. Same can be said for

Read More

لارنس آف عریبیہ

لارنس کی شخصیت مسلم ممالک میں جاسوسی اور عربوں میں قومیت کا شعور بیدار کرنے اور انہیں ترکوں سے لڑانے کی وجہ سے مسلمانوں کے ہاں متنازعہ رہی ہے، لیکن تاریخ پر اس کے اثرات سے انکار ممکن نہیں
Read More

بریگیڈیئر جنرل ڈائر، قصابِ امرتسر

جنرل ڈائر سے نفرت کے باوجود ہم جلیانوالہ باغ میں سیکڑ وں معصوم ہندوستانیوں کے خون سے ہاتھ رنگنے والے جنرل ڈائر کے بارے میں کم ہی کچھ جانتے ہیں۔
Read More

(رائے بہادر سر گنگا رام (ایم وی او، سی آئی ای

رائے بہادر سر گنگا رام کو اس بستی کے باسی بھی فقط ایک سرکاری انجنئیر کے طور پر جانتے ہیں جسے بسانے میں گنگا رام کی محنت اور دولت ہی نہیں بلکہ اُن کے خلوص اور محبت نے اہم کردار ادا کیا۔
Read More

نواب خیر بخش مری

خیر بخش مری اپنے نظریات میں سوشلسٹ تھے اور مسلح جدوجہد کے بہت بڑے حامی تھے۔
Read More

تھا ضمیرِ جعفری بھی اک مزیدار آدمی۔۔۔ ؎

ضمیر کا معاشرتی ادراک اور سیاسی بصیرت مزاح میں اکبر الہ آبادی یا حالیؔ کی طرح مربیانہ زبان رکھتا ہے نہ فوجداروں سا آہنگ کہ جس سے کسی اصلاحی تحریک کی بُو آتی ہو۔
Read More

! جو کرن قتل ہوئی،شعلہء خورشید بنی

شہباز بھٹی اورسلمان تاثیر کے خونِ ناحق کے بعد کمیشن برائے انسانی حقوق، جنوبی پنجاب کے کوآرڈینٹر راشد رحمان کا نام شب گزیدگان کی اس فہرست میں ایک اور نام کا اضافہ ہے۔
Read More

خشونت سنگھ

کے مقبول مورخ، قانون دان، صحافی، ناول نگار، کالم نگار، ادیب اور دانشور خشونت سنگھ 99سال کی عمر میں طویل علالت کے بعد بروز جمعرات 20 مارچ 2014 کو بھارتی درلحکومت دہلی میں انتقال کر گئے ۔
Read More

Jalib and Today’s Pakistan

Jalib is not alive today but his verses still depict realities of our society.

Read More

میکال حسن - لالٹین انٹرویو

ہمارے مسائل بیورو کریٹک اور سیاسی ہو سکتے ہیں مگر ہندوستان پاکستان کا سُر علیحدہ نہیں ہو سکتا۔" میکال حسن
Read More

ابوالکلام آزاد

محی الدین احمدابوالکلام آزاد بر صغیر کی تاریخ کا وہ نفیس کردار ہے جو کسی تعارف کا محتاج نہیں، آپ غیرمنقسم ہندوستان کی عظیم اور مقتدر شخصیتوں میں سے ایک تھے
Read More

سعادت حسن منٹو

"میں تہذیب و تمدن کی چولی کیا اتاروں گا جو ہے ہی ننگی۔اور میں اسے کپڑے پہنانے کی کوشش بھی نہیں کرتا کہ یہ میرا نہیں درزیوں کا کام ہے۔"یہ جملے ہندوستان کے اس عظیم افسانہ نگار کے ہیں جسے دنیا سعادت حسن منٹو کے نام سے جانتی ہے۔
Read More