Youth Yells

Back to homepage

یوتھ یلزایک رنگا رنگ سلسلہ ہے، جس میں نوجوان قلمکار بلا جھجک اپنے ھر طرح کے خیالات کا دوٹوک اظہار کر سکتے ہیں۔۔ آپ کا اسلوب سنجیدہ ہے یا چٹخارے دار۔۔ آپ سماج پر تنقید کا جذبہ لیے ہوئے ہیں یا خود پر ہنسنے کا حوصلہ۔۔۔۔ “لالٹین” آپ کی ہر تحریر کو خوشآمدید کہتا ہے۔



بلراج مین را: موت/ تخلیقی موت کا طلسم

اکرم پرویز: ہم نے مین را کی چپ میں معاشرتی اور سیاسی استبداد کی کہانی اگر نہیں سنی تو پھر ہمیں اس کی موت پر چھاتی پیٹنے کا کوئی حق نہیں۔
Read More

ہائے ماں

ثمینہ تبسم: اب میں جب بھی سپارا کھولتی ہوں
مُجھ کو پھر سے ڈراتا ہے وہ خواب
Read More

نمبر

سلمیٰ جیلانی: ہر طرف اونچے گریڈوں کا شور ہے
انسان کھوگئے ہیں نمبروں کی دوڑ میں
Read More

عشرہ/ آرمی سے لڑتے ہو؟

ہمایوں خان: آرمی سے لڑتے ہو؟ ۔۔ آرمی تو تم بھی ہو، آرمی تو ہم بھی ہیں
Read More

سرل کی خبر؛ انجام شرمناک بھی ہو سکتا ہے

اجمل جامی: سرل کی خبر پر تبصرہ کرنے والا کوئی رہ تو نہیں گیا؟ اگر جواب ہاں میں ہے تو درکار تفصیلات کے ساتھ مطلع کیجئے گا۔
Read More

عشرہ/ میرا کمرہ

محمد عامر: کپ یہاں ایش ٹرے کا کام کریں
میز پر چار چھ کتابیں ہیں
نیچے کچھ بوٹ اور جرابیں ہیں
Read More

غلامی کی نماز

وقاص عالم: سیاست سے لے کر معاشرت تک تمام شعبہ ہائے زبدگی زوال پذیر ہیں۔ مگر اس سب کے باوجود ہم محض "اللہ ہو" کے ورد اور "اللہ اکبر" کے نعروں پر اکتفا کیے ہوئے ہیں۔
Read More

مذہب آسان ہدف کیوں؟ مذہب بیزار تصنیف حیدرکے نام خط

سدرہ سحر عمران: تمہیں کیسے پتہ جو تم نیک عمل کر رہے ہو وہ انسانیت کی بھلائی اور خیر خواہی ہے۔ اور جو دوسرے کر رہے ہیں وہ محض فساد فی الا رض ہے۔ وہ کون سا پیمانہ ہے جس کی مدد سے ہم خیر اور شر کو علیحدہ کر سکتے ہیں۔
Read More

عشرہ // کربلا سے مختلف نتائج

ادریس بابر: آگ، اندھیرے سے بجھانے والے
سنگ کو آئینہ دکھانے والے
آئینہ دیکھنے سے ڈرتے ہیں
کربلا دیکھنے سے ڈرتے ہیں
Read More

ڈی این اے کی خود سے لڑائی

ثروت زہرا: علیشا سب سے پہلے
جننے والی کوکھ نے تم کو جدائی دی
عقائد نے ترے سوتک سے پاتک تک کے بارے میں
صفائی دی
Read More

نظم مجھے ہر جگہ ڈھونڈ لیتی ہے

نصیر احمد ناصر: میں اُسے نہیں لکھتا
وہ مجھے لکھتی رہتی ہے
اَن کہے، اَن سنے لفظوں میں
اور پڑھ لیتی ہے مجھے
دنیا کی کسی بھی زبان میں
Read More

باغی لوگ سوچ کے زاویے بدل رہے ہیں

فاروق خان: ایڈسن نے کہا کہ میرے جسم میں کسی روح کا کوئی وجود نہیں بلکہ جسم خلیوں کا ایک مجموعہ ہے، میں اپنے جسم کی تخلیق کو خدائی معاملہ بالکل بھی نہیں سمجھتا۔ ایڈسن نے مذہبی عقائد کو ایک بکواس کا نام بھی دیا۔
Read More

مَرے ہوؤں کی موت

نصیر احمد ناصر: جو پہلے سے مر چکے ہوں
ان کے مرنے کا اعلان عجیب لگتا ہے
Read More

ادبی تھیوری:ایک مغالطہ (پہلا حصہ)

عامر سہیل: تخلیقی فن پارہ صرف اپنی لسانی ساخت کی وجہ سے اہم نہیں ہوتا بلکہ اپنے فکری عناصر کی وجہ سے بھی فن پارہ بنتا ہے۔ادبی تھیوری نے فن پارے کے فکری اور معنوی پہلو کو جس احمقانہ شدت سے رد کیا وہ بجائے خود ایک مضحکہ خیز عمل ہے۔
Read More

میٹرو نہیں بنیادی ضروریات

ارشد علی: میرے نزدیک ایک جاں بلب قوم کے لیے ان منصوبوں کی حثیت ایسے ہی ہے جیسے کسی پیاس سے مرتے ہوئے انسان کے گرد من و سلویٰ اور انواع و اقسام کے کھانے چن دیئے جائیں مگر پانی نہ دیا جائے۔
Read More