مدثر عظیم کے عشرے

مدثر عظیم کے عشرے

عشرہ -- دس لائنوں پر مبنی شاعری کا نام ہے جس کے لیے کسی مخصوص صنف یا ہئیت، فارم یا رِدھم کی قید نہیں. ایک عشرہ غزلیہ بھی ہو سکتا ہے نظمیہ بھی۔ قصیدہ ہو کہ ہجو، واسوخت ہو یا شہرآشوب ہو، بھلا اس سے کیا فرق پڑتا ہے۔ ادریس بابر

مزید عشرے پڑھنے کے لیے کلک کیجیے۔
عشرہ // ڈپریشن

پچھلی رات کے
پاگل پن سے
باہر آ کر
سوچ رہا ہوں

کھڑکی
کھولی
جا سکتی ہے

کمرہ
روشن
ہو سکتا ہے

عشرہ // فرسٹریشن

جی فرمایئں
بلکہ تم تو بھونکو ۔۔۔ کتے!
آدھی رات کو میسج کر کے
تم نے اپنے کتے پن کی
ایک جھلک تو دکھلا دی ہے

میسج چھوڑو ۔۔۔۔۔ کال کرو اب
کال نہیں ۔۔۔۔۔ تم آ ہی جاو
پیچھے والا دروازہ بھی کھول رہی ہوں
جلدی آو ۔۔۔۔ ورنہ میرا شوہر کتا
سات بجے تک آ جاتا ہے

عشرہ // عجیب لڑکی

وہ بات کرتی تھی فلسفے پر،
کہانیوں اور شاعری کی
وہ ایک لڑکی جو روشنی کی تلاش میں تھی
میرے اندھیروں کے ساتھ بھی تھی
وہ مچھلیوں کو دلاسے دیتی ، وہ تتلیوں سے دعایئں لیتی
کبھی وہ دھڑکن کو ساز کہتی ، کبھی وہ خوابوں کے ساتھ بہتی ، سریلی لڑکی
کبھی وہ جنت کو شُوٹ کرتی ، کبھی جہنم کو پینٹ کرتی ، پہیلی لڑکی
وہ اپنے ہونے کی کھوج میں تھی
مگر نا ہونا بھی چاہتی تھی،
عجیب لڑکی!
Image: Saša Auguštanec

Did you enjoy reading this article?
Subscribe to our free weekly E-Magazine which includes best articles of the week published on Laaltain and comes out every Monday.

Related Articles

ایک معصوم سچ کی ٹوٹی ہوئی ٹانگ اور دوسرے عشرے

ضیاء افروز: نئے چراغ اسی طاق پر جلیں گے یہاں،
جہاں قدیم چراغوں کو گل کیا گیا تھا

اوڈ ٹو سموسہ اور دیگر عشرے

جنید الدین: ہم پرانی لائبریریوں میں کھنگالے جائیں گے
جب لڑکے کچھ خط چھپانے آئیں گے

عشرہ/ میرا کمرہ

محمد عامر: کپ یہاں ایش ٹرے کا کام کریں
میز پر چار چھ کتابیں ہیں
نیچے کچھ بوٹ اور جرابیں ہیں