نظموں کے لیے ایک سباٹیکل (تنویر انجم)

نظموں کے لیے ایک سباٹیکل (تنویر انجم)

آپ کا کام خاصا توجہ طلب ہے
ہفتے میں اٹھارہ گھنٹے پڑھانا
باقی تیس گھنٹوں میں
دنیا کے مشہور شاعروں اور ادیبوں پر
تحقیق کرنا اور کروانا
کانفرنسوں میں جانا
سیمینار کروانا
پینلز میں شامل ہونا
بین الاقوامی جریدوں کے لیے مضامین لکھنا
اور آپ کو تنخواہ کے علاوہ ملے گا
ایئرکنڈیشنڈ کمرے میں ایک کیوبیکل
ہفتے میں ایک دن کی رخصت
اور سال میں دس اتفاقی، دس بیماری کی، اور دس استحقاقی رخصتیں
اور پانچ سال کے بعد آپ چاہیں تو درخواست دیں
ایک سباٹیکل کی
یہ ہے ہمارا پیکیج

یہ میرے لیے کچھ ٹھیک نہیں ہے
آپ ایسا کریں مجھے دے دیں
ملازمت شروع ہوتے ہی
نظمیں لکھنے کے لیے ایک سباٹیکل

Tanveer Anjum

Tanveer Anjum

تنویرانجم اُردو نثری نظم کا نمایاں نام ہیں۔ اب تک ان کے نثری نظموں کے سات مجموعے شایع ہو چکے ہیں۔ تنویر انجم نے یونیورسٹی آف ٹیکساس آسٹن سے لسانیات میں پی ایچ ڈی کیا اور شعبہٗ تدریس سے وابستہ ہیں۔


Related Articles

سیدھی بارش میں کھڑا آدمی (حسین عابد)

بارش بہت ہے وہ ٹین کی چھت کو چھیدتی دماغ کے گودے میں اور دل کے پردوں میں چھید کرتی

Mob the Omnipotent

سرمد بٹ: آدم باغ سے نکل کر ہجوم بن گیا تھا
ہجوم آدمی ہے
ہجوم کچھ بھی کر سکتا ہے

ایک نظم اپنے اداس شہر پر

تنویر انجم: ٹیڑھی کمزور دیواروں سے دور بیٹھوں
اونچی نیچی سڑکوں پر قدم نہ رکھوں
کھڑکیاں بند کر لوں
تو لکھ سکوں ایک نظم
اپنے اداس شہر پر