سیدھی بارش میں کھڑا آدمی (حسین عابد)

سیدھی بارش میں کھڑا آدمی (حسین عابد)

بارش بہت ہے
وہ ٹین کی چھت کو چھیدتی
دماغ کے گودے میں
اور دل کے پردوں میں
چھید کرتی
پیروں کی سوکھی ہڈیاں چھید رہی ہے
میں چاہتا ہوں
چھت پہ جا کر لیٹ جاوں
اور سوراخوں کو
چھلنی وجود کے بوجھ سے
بند کردوں
مگر
سیدھی بارش کی میخوں نے
پاوٗں
بہتے فرش میں گاڑ دیئے ہیں
Image: Victor Calahan

Hussain Abid

Hussain Abid

Poet and Musician Hussain Abid, was born in Lahore and is currently living in Germany. His poetry collections; "Utri Konjain", "Dhundla'ay din ki Hidat" and Behtay Aks ka Bulawa" have been praised by the general audience and the critics alike. Hussain Abid collaborated with Masood Qamar to produce "Kaghaz pe Bani Dhoop" and "Qehqaha Isnan ne Ejad kia". Abid's musical group "Saranga" is the first ever musical assemble to perform in Urdu and German together.


Related Articles

اسکیچ اور سایہ

سرمد بٹ: مرد کی آنکھ میں عورت کا اسکیچ ہے
عورت کے دل میں مرد کا سایہ ہے
مرد دیوار چاٹ رہا ہے
عورت سائے میں لیٹی ہوئی ہے

دریا مرتا جاتا ہے

عمران ازفر:
گرتے پڑتے یگ میں تم بھی
شام ڈھلے تک آ جانا کہ اس سے پہلے
چرخہ کاتتے، ریشم بنتے، خواب سجاتے
ہاتھوں میں جب چھید پڑیں تو
بوڑھا دریا کچی مٹی کے پہلو میں
لحظہ لحظہ مرتا جائے

نارسائی

طوقِ یُوسف کی آخری کڑی ٹوٹتی ہے
طرح داری کا دور بیدار ہوتا ہے