میں خوف ہوں (ایچ-بی-بلوچ)

میں خوف ہوں (ایچ-بی-بلوچ)

حلیے اور
شکلیں بدل بدل کر
مجھ سے مت پوچھو
کہ میں کون ہوں

میں محنت اور اطاعت کا
کالا رنگ ہوں
جس سے تم نے
نسلی تعصب گھڑ ڈالا

میں گول چکرا ہوں
جس سے
موہن جو دڑو کے باسیوں نے پہیہ بنایا
اور جس سے تم نے
دار کی چرخیاں بنا ڈالیں

میں کنور رام کی آواز ہوں
جس سے تم نے سائرن بنا لیے

میں محبت ہوں
جس سے تم نے شیطان بنا ڈالا
میں طلب ہوں
جس سے تم نے دیوتا بنا لیے

میں خوف ہوں
آج کل تم جس سے
انسان بنانے کے چکر میں ہو!


Related Articles

محبت اپنا زائچہ نکلوانا چاہتی ہے

عذرا عباس: تم جلدی سے میرا زائچہ نکالو
اور دیکھو
مجھے کب تک تمھارے ساتھ رہنا ہے
تم کب تک مجھے گھسیٹو گی

تقریرکرنے والوں کے ہونٹوں پر

ممتاز حسین: تقریر کرنے والوں کے ہونٹوں پر
ہم اپنی ضرورتوں کی جمع بندی
رکھ دیتے ہیں

اور خدا کرے وہ تمھیں کبھی معاف نہ کرے

برخوردار گولی تم اتنا چیختی کیوں ہو؟ کیا تمھیں شرم نہیں آتی کہ تمھیں چلانے والوں کے اندر کوئی چیخ