یوم محبت اور باسی پھول (وجیہہ وارثی)

یوم محبت اور باسی پھول (وجیہہ وارثی)

یوم محبت
رفیق حیات کے ساتھ شریک سفر
اشارے کی رنگین بتی کے نیچے
سرخ لباس میں ملبوس
جوان فقیرنی
ہاتھ میں پھول
گود میں دو برس کابچہ
پیٹ میں چھ ماہ کی بچی لٸے
کھڑی تھی
دیکھٸے جی
اسے بھی کوٸی پھول دے گیا
آپ نے مجھے نہیں دیا
دیکھو
اسے محبت نے فقیرنی بنا دیا
اور تمہیں
مہارانی
اب تم فیصلہ کرو
تمہیں تاج چاہٸے
یا
باسی پھول

Wajih Warsi

Wajih Warsi

Wajih Warsi is a theater activist. He has been performing on stage with various theater groups since 1988. He founded Bang, Sevak and Nao Theater Workshop. He is a TV playwright and poet.


Related Articles

آبائی گھروں کے دکھ

نصیر احمد ناصر: آبائی گھر ایک سے ہوتے ہیں
ڈیوڑھیوں، دالانوں، برآمدوں، کمروں اور رسوئیوں میں بٹے ہوئے
لیکن ایک دوسرے کے ساتھ جڑے ہوئے

شنگھاؤ غار

زید سرفراز: ہم غار کی دیواروں میں مجسم، وہ تنہائی تھے
جسے صورت دیتے ہوئے
مؤرخ نے تیشے کا استعمال کیا

پورے نو مہینے کا اجالا؛ سات مختصر نظمیں

ایچ-بی-بلوچ: میں چھوٹی عمر کا
نو مولود ستارہ ہوں
میرا راستہ کیسا اور کتنا ہوگا؟